آئی ایم ایف کے بعد ورلڈ بینک بھی پاکستان سے ناراض  بجلی کی قیمتیں نہ بڑھانے پر شرائط لگانا شروع کر دیں 

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک /این این آئی)بجلی کی قیمتیں نہ بڑھانے پر ورلڈبینک نے بھی شرائط لگانا شروع کردیں ، گردشی قرضہ جلد کم کرنے کا پلان طلب کرلیا۔تفصیلات کے مطابق عالمی بینک نے گردشی قرضے میں اضافے پر شدید تحفظات کا اظہار کردیا ۔

نجی ٹی وی ٹوئنٹی فور کے مطابق ورلڈ بینک نے گردشی قرضے میں کمی کے پلان پر عمل درآمد پر عدم اطمینان کا اظہار کردیا ہے۔ ذرائع کے مطابق عالمی بینک میں گردشی قرض میں کمی کے لئے مختلف تجاویز پر غور جاری ہیں اورپاور سیکٹر کی سبسڈی بڑھانے کی سفارش کا جائزہ لیا جارہا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پاور پلانٹس کے معاہدوں پر نظرثانی کی جارہی ہے ۔دوسری جانب دنیا کے دو بڑے قرض دہندگان عالمی بینک اور ایشین ڈیویلپمنٹ بینک نے کچھ شرائط پوری کرنے میں تاخیر اور بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کے ساتھ بات چیت میں تعطل کی وجہ سے پاکستان کو مزید 1 بلین ڈالر قرض کی منظوری ملتوی کردی ہے۔ ذرائع کے مطابق عالمی بینک 1.5 بلین ڈالر کے اصل منصوبے کے مقابلہ میں 28 جون2021 کو 800 ملین ڈالر کے قرضوں کی منظوری دے گی۔پاکستان اور ورلڈ بینک نے500 ملین ڈالر کے تین قرضوں پر بات چیت کی تھی۔ ورلڈ بینک نے پائیدار معیشت پروگرام کے تحت ایکقرض کی منظوری ملتوی کردی ہے۔سیکیورٹی ہیومن انویسٹمنٹ کے تحت دوسرے دو قرضوں کا حجم 500 ملین ڈالر سے کم کرکے 400 ملین ڈالر کردیا ہے۔پاکستان کی جانب سے کچھ شرائط پوری نہ ہونے پر عالمی بینک نے قرض کی رقم میں کمی کا فیصلہ کیا۔ میڈیا پورٹس کے مطابق ایشین ڈویلپمنٹ بینک (ADB) نے 300 ملین ڈالر کے انرجی سیکٹر ریفارمز اور مالی استحکام پروگرام کی منظوری کچھ وقت کیلئے ملتوی کر دی ہے۔ذرائع کے مطابق ورلڈ بینک کا بورڈ 28 جون کو شفٹ اور پی اے سی ای کی دوسری سیریز پر غور کرے گا ‎

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.