پینشنرز نے دس فیصد اضافے کو مسترد کر دیا

جیکب آباد(این این آئی)پینشنرز نے سندھ حکومت کی جانب سے دس فیصد اضافے کو مسترد کر دیا، پینشن میں بیس فیصد اضافے کا مطالبہ،بلاول بھٹو زرداری سے سندھ حکومت کو ہدایت کرنے کی اپیل،21جون سے سندھ بھرمیں رٹائر ملازمین کا احتجاج کا اعلان تفصیلات کے مطابق رٹائرڈ گورنمنٹ ایمپلائیز ایسوسیئیشن سندھ

کی چیف آرگنائیزر ارشاد بروہی، اراکین اسحاق لاشاری نذیر میمن منیر کھوسو عنایت بھٹو نے اپنے ایک بیان میں پینشن میں صرف دس فیصد اضافے کو مسترد کرتے ہوئے وزیراعلی سے مطالبہ کیا ہے کہ پینشن میں بھی بیس فیصد اضافہ کیا جائے کیونکہ مہنگائی اتنی بڑھ چکی ہے کہ اب دوائیوں کا اتنا بل آتاہے کہ گذر سفر بہت ہی مشکل سے ہوتا ہے اور ہمیشہ سے روایت ہی ہے کہ جتنا تنخواہ میں اضافہ کیاجاتاہے اتنی ہی پینشن بڑھائی جاتی ہے پہلی مرتبہ پینشنرز کے ساتھ زیادتی کرتے ہوئے پینشنرز کو آدھا اضافہ دیا جا رہا ہے حالانکہ بیس فیصد اضافے سے کوئی خزانہ خالی نہیں ہوجائے گاچیئر مین بلاول بھٹو زرداری نے تو اسمبلی میں اعلان کیاتھا کہ وہ ملازمین کے ساتھ ہیں اور ملازمین کو تیس فیصد اضافہ دینے کا مطالبہ کیا تھا بلاول بھٹو زرداری سے بھی اپیل کرتے ہیں کہ وہ اپنی سندھ حکومت کو ہدایت کریں کہ پینشنرز کی پینشن میں بیس فیصد اضافہ کرے رٹائرڈ گورنمنٹ ایمپلائیز ایسوسیئیشن سندھ بیس فیصد اضافہ حاصل کرنے کیلئے 21 جون پیر کے دن سندھ کے تمام ضلعی ہیڈ کورٹرز میں احتجاجی مظاہروں کا اعلان کرتی ہے اگر پھر بھی حکومت نے ہمارے جائز مطالبات تسلیم نہ کئے توپھر کراچی میں سندھ اسمبلی کے سامنے تا دم مرگ دھرنا دیا جائے گا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.