حکومتی حکمت عملی تبدیل،بیرون ملک جانے والے افراد، اسٹڈی اور ورک ویزہ پر جانے والوں کو فائزر ویکسین نہ لگانے کا فیصلہ

لاہور(این این آئی) حکومت نے بیرون ملک جانے والے افراد، اسٹڈی اور ورک ویزہ پر جانے والوں کو فائزر ویکسین نہ لگانے کا فیصلہ کیا ہے،مذکورہ ویکسین صرف حجاج اور دائمی امراض کے شکارافراد کو لگائی جائے گی۔تفصیلات کے مطابق فائزرکوروناویکسین کے استعمال کی حکومتی حکمت عملی تبدیل ہوگئی، ذرائع کا کہنا ہے

کہ بیرون ملک جانے والے افراد، اسٹڈی، ورک ویزہ پر جانے والوں کوفائزر ویکسین نہ لگانیکافیصلہ کیا گیا ہے۔وزارت صحت کے ذرائع نے بتایا کہ فائزرویکسین حجاج،دائمی امراض کے شکارافراد کولگائی جائیگی، فائزر ویکسین کے استعمال کا آغاز رواں ہفتے سے ہوگا۔ذرائع نے کہا ہے کہ ویکسین کی حکمت عملی میں تبدیلی کافیصلہ مشاورت سے کیاگیا اور ویکسین کی قلیل مقدارکے پیش نظرحکمت عملی تبدیل کی گئی ہے، فائزرکی دوسری کھیپ ملنے پربیرون ملک جانے والوں کولگائی جائیگی۔وزارت صحت کا کہنا تھا کہ فائزر کورونا ویکسین 15 مخصوص شہروں میں لگائی جائے گی اور ان 15 شہروں کے مخصوص ویکسی نیشن سینٹرزپردستیاب ہو گی، مخصوص سینٹرزپرخصوصی تربیت یافتہ عملہ فائزرویکسین لگائے گا۔ذرائع کے مطابق فائزرویکسین کے استعمال کیلئے ویکسی نیٹرز کی خصوصی ٹریننگ مکمل کرلی گئی ہے،پاکستان کوکوویکس سے فائزر ویکسین کی 1لاکھ 620ڈوزملی ہیں۔ذرائع نے مزید کہا کہ بیرون ملک جانیوالوں کے لئے آسٹرازنیکاویکسین دستیاب ہے، آسٹرازنیکا ویکسین سعودی عرب،یو اے ای سمیت یورپ میں تسلیم شدہ ہے۔دوسری جانب ملک بھر میں کرونا وائرس سے مزید 76افراد زندگی کی بازی ہا رگئے،1303کیسز رپورٹ ہوئے۔ نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول سینٹر (این سی او سی)

کے اعداد و شمار کے مطابق پاکستان میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے مزید 1 ہزار 303 کیسز سامنے آئے ہیں، مزید 76 افراد اس موذی وباء کے سامنے زندگی کی بازی ہار گئے، مزید 1 ہزار 978 مریض شفایاب اور مثبت کیسز آنے کی شرح 3اعشاریہ 1 فیصد رہی۔سماجی فاصلے، ماسک کو نظر انداز کرنے اور

ایس او پیز کی خلاف ورزیوں سے پاکستان میں کورونا وائرس کے کیسز میں گزشتہ روز کی نسبت اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔کورونا وائرس کی جاری تیسری لہر کے دوران پاکستان کورونا مریضوں کی تعداد کے حوالے سے مرتب کی گئی فہرست میں 29 ویں نمبر پر ہے۔ملک بھر میں کورونا وائرس سے انتقال کرنے والوں کی مجموعی

تعداد 21 ہزار 529 ہو گئی ہے، جبکہ کْل کورونا مریضوں کی تعداد 9 لاکھ 37 ہزار 434 ہو چکی ہے۔ملک بھر میں ہسپتالوں، قرنطینہ سینٹرز اور گھروں میں کورونا وائرس کے کْل 44 ہزار236 مریض زیرِ علاج ہیں، جن میں سے 2 ہزار 967مریضوں کی حالت تشویش ناک ہے، جبکہ کْل 8 لاکھ 71 ہزار 669 مریض اب تک اس بیماری

سے شفایاب ہو چکے ہیں۔24 گھنٹوں میں کورونا وائرس کے مزید 41ہزار 824 ٹیسٹ کیئے گئے، جبکہ اب تک کْل 1 کروڑ 37 لاکھ 54 ہزار 909 کورونا ٹیسٹ کیئے جا چکے ہیں۔پاکستان بھر میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 2 لاکھ 52 ہزار 964 افراد کو کورونا وائرس کی ویکسین دی گئی، اب تک کْل 95 لاکھ 59 ہزار 910

کورونا ویکسین کی خوراکیں دی جا چکی ہیں۔تیسری لہر کے دوران پنجاب میں کورونا مریضوں کی تعداد دیگر صوبوں سے زیادہ ہو کر 3 لاکھ 43 ہزار 252 ہو گئی، جبکہ یہاں کْل ہلاکتیں بھی دیگر صوبوں سے زیادہ ہیں جو 10 ہزار 436 ہو چکی ہیں۔سندھ میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 3 لاکھ 25 ہزار 738 ہو چکی

ہے، جبکہ اس سے کْل اموات 5 ہزار 183ہو گئیں۔خیبر پختون خوا میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 1 لاکھ 35ہزار 162 ہو چکی ہے، جبکہ اس سے یہاں اب تک کْل اموات 4 ہزار 185ہو گئیں۔وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں 81 ہزار 933کورونا وائرس سے متاثرہ مریض اب تک سامنے آئے ہیں، اب تک یہاں کْل 768 افراد

اس وباء سے جان کی بازی ہار چکے ہیں۔کورونا وائرس کے بلوچستان میں 26 ہزار 52مریض اب تک رپورٹ ہوئے ہیں جہاں 291 افراد اس مرض سے انتقال کر چکے ہیں۔آزاد جموں و کشمیر میں کورونا وائرس کے اب تک 19 ہزار 623مریض رپورٹ ہوئے ہیں، اس کے باعث اب تک یہاں کْل 559 مریض وفات پا چکے ہیں۔گلگت بلتستان میں 5 ہزار 674کورونا وائرس کے مریض سامنے آئے ہیں اس سے اب تک 107 افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *