13 مقامات پر ٹریک کی حالت ٹھیک نہ ہونے کی تحریری رپورٹ کے باوجود مجرمانہ غفلت کیوں برتی گئی؟ شہباز شریف

لاہور(این این آئی)پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے ڈہرکی کے قریب سرسید ایکسپریس اور ملت ایکسپریس کے تصادم پر رنج و غم اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ حادثے کی جگہ سمیت سکھر ڈویڑن میں 13 مقامات پر ٹریک کی حالت ٹھیک نہ ہونے کی تحریری رپورٹ کے باوجود

مجرمانہ غفلت کیوں برتی گئی؟،واقعے کی حقیقی اور غیر جانبدارانہ تحقیقات کرائی جائے اور ذمہ داران کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔ اپنے بیان میں اپوزیشن لیڈر نے کہاکہ ٹرین کے تصادم میں قیمتی جانوں کے ضیاع اور درجنوں مسافر زخمی ہونے پر دلی دکھ ہے،متاثرہ خاندانوں سے ہمدردی اور تعزیت کرتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ حادثے کی جگہ سمیت سکھر ڈویژن میں 13 مقامات پر ٹریک کی حالت ٹھیک نہ ہونے کی تحریری رپورٹ کے باوجود مجرمانہ غفلت کیوں برتی گئی؟،افسوس موجودہ دور ٹرین کے حادثات کا دور ثابت ہو رہا ہے،واقعہ کی حقیقی اور غیر جانبدارانہ تحقیقات کرائی جائے اور ذمہ داران کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔ انہوں نے کہاکہ اللہ تعالی مرحومین کو جنت الفردوس میں جگہ دے اور لواحقین کو صبر جمیل دے،قائد حزب اختلاف نے زخمیوں کی جلد صحت یابی کی دعا کی۔دوسری جانب سیکرٹری جنرل پاکستان پیپلز پارٹی سید نیرحسین بخاری نے گھوٹکی ٹرین حادثہ پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ بے حس حکمران بڑھتے ہوئے ٹرین حادثات کی روک تھام کے عملی اقدامات کیوں نہیں اٹھاتے۔ اپنے بیان میں نیر حسین بخاری حادثے میں جاں بحق مسافروں کے لواحقین سے ہمدردی اور یکجہتی کا اظہار کیا۔ انہوں نے سوال کیاکہ بے حس حکمران بڑھتے ہوئے ٹرین حادثات کی روک

تھام کے عملی اقدامات کیوں نہیں اٹھاتے،وفاقی وزیر ریلوے سے فوری استعفے لیا جائے۔نیر بخاری نے کہاکہ گزشتہ تین سالوں میں ٹرین حادثات میں قیمتی جانوں کے ضیاع پر وزیراعظم نے وزیروں کی باز پرس تک نہیں کی۔انہوں نے کہاکہ نالائق کپتان اور نااہل ٹیم ہر ادارہ میں ناکام ثابت ہو رہی ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *