’’نثار تو میرے مخالف تھے پھر قریبی دوست بن گئے‘‘ 30سالہ دوستی کا تعلق کیسے ختم ہوا، شہبا زشریف کا انکشاف

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہبازشریف نے کہا ہے کہ چوہدری نثار نواز شریف کے دوست تھے۔ مجھے دوست بھی نواز شریف سے وراثت میں ملے ہیں۔ چاہے نثار ہوں یا خواجہ آصف۔نثار تو میرے مخالف تھے پھر قریبی دوست بن گئے۔ 30سالہ دوستی کا تعلق غلط طور پر ختم ہوا۔ حلف اٹھانے کا فیصلہ ان کا اپنا ہے انہوں نے مجھ سے کوئی مشاورت نہیں کی۔

شہباز شریف نے کہا ہے میدان جنگ میں گھوڑے اور موذی بیماریوں میں ڈاکٹرز تبدیل نہیں ہوتے۔نجی ٹی وی ہم نیوز کے مطابق لندن کرکٹ کا میچ دیکھنے یا جادو ٹونا سیکھنے نہیں جارہا تھا۔ میں خطرناک کینسر کا مریض رہ چکا ہوں 2003سے لندن میں ریگولر چیک اپ ہوتا ہے چیک اپ کروانے جانا صحت کا تقاضا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مزاحمت ہمارا راستہ نہیں ہے، قومی مفاہمت کے لیے نواز شریف سے بات کروں گا۔ مجھے ان کے پاؤں بھی پکڑنے پڑے تو یہ کروں گا۔ مسلم لیگ ن کے مرکزی صدر نے کہا گارنٹی دیتا ہوں کہ نواز شریف قومی ترقی کے لیے تعاون پر تیار ہوں گے۔شرط یہ ہے کہ سب کے لیے لیول پلینگ فیلڈ ہو۔ ان کا کہنا تھا کہ نئے سماجی معاہدے کی ضرورت ہے، جس میں صاف شفاف الیکشن ہوں، ادارے اپنے دائرے میں کام کریں ، آئین و قانون کی حکمرانی ہو ، عدلیہ آزاد ہو اور مقننہ کو کام کرنے کا موقع ملے۔ شہباز شریف نے کہا، مریم نواز سیاست دان ہیں، مریم ہوں یا حمزہ، سیاست سب کا حق ہے۔ فیصلہ عوام کریں گے، مریم کو گرومنگ کی ضرورت ہے ان کے والد اور میں چچا کی حیثیت سے یہ کام کریں گے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *