’’تمام مسائل حل ہوگئے‘‘ ترین گروپ کا عثمان بزدار سے ملاقات کے بعد اعلان‎

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک /آن لائن)وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار سےترین گروپ کی ملاقات ، معاملات طے پا گئے ۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعلی پنجاب سے ملاقات کے بعد سعید اکبر نوانی کا کہنا تھا کہ جہانگیر ترین گروپ حقیقت ہے، پہلے بھی کہا تھا افواہوں میں کوئی صداقت نہیں۔انکا کہنا تھا کہ ہمارے معاملات طے پا گئے ہیں بجٹ سمیت تمام ایشو کو زیر بحث لایا گیا ہے وزیراعلی کے

جوابات سے مطمئن ہیں ۔ انکا کہنا تھا کہ ہمارا مطالبہ کے شفاف سطح پر انکوائری ہونے چاہیے اس کے بعد جو رزلٹ آئے گا ہم اسے تسلیم کریں گے ۔ قبل ازیں پنجاب حکومت اور پی ٹی آئی کے سینئر رہنما جہانگیر ترین کے حمایت یافتہ اراکین پنجاب اسمبلی کے درمیان معاملات طے پا گئے ہیں اس سلسلے میں ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں فریقین کے درمیان رنجش ختم کرنے کے سلسلے میں گورنر پنجاب چودھری محمد سرور،وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید سمیت خود وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے اہم کردار ادا کیا۔ وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید کا دورہ لاہور اور لاہور ریجن میں واقعہ ایف آئی اے کے دفاتر کا دورہ اسی سلسلے کی ایک کڑی تھی واضح رہے کہ ڈائریکٹر ایف آئی اے لاہور ریجن ڈاکٹر رضوان جو جہانگیر ترین اور ان کے صاحبزادے علی ترین کی فلور ملوں کے خلاف تحقیقات کر رہے ہیں سے وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے خصوصی ملاقات کی تھی۔ اس ملاقات کے حوالے سے شیخ رشید نے جہانگرین ترین کے خلاف درج مقدمہ کے حوالے سے بھی تبادلہ خیال کیا تھا۔دوسری جانب پنجاب اسمبلی نے پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنما جہانگر ترین گروپ سے تعلق رکھنے والے اراکین پنجاب اسمبلی کے ایک وفد نے گزشتہ روز ایوان وزیراعلیٰ میں وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار سے ملاقات کی ملاقات کرنے والے جہانگیر ترین حمایت یافتہ

اراکین پنجاب اسمبلی کے 7 رکنی وفد میں سعید اکبر نوانی، اجمل چیمہ، نذیر چوہان، عمر آفتاب، نعمان لنگڑیال، ذوار وڑائچ اور عون چودھری شامل تھے۔ ملاقات کے حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ فریقین کے درمیان کرونا ایس او پیز پر عملدرآمد کرتے ہوئے خوشگوار موحول میں ملاقات ہوئی۔ وفد کے ارکان نے وزیراعلیٰ پنجاب سے اپنے سینے پر ہاتھ رکھ کر مصافحہ کیا ملاقات میں

وفد نے وزیراعلیٰ پنجاب کو اپنے تحفظات سے آگاہ کیا اور انہیں احساس دلانے کی کوشش کی کہ وہ پنجاب کی حکومت اپنے اراکین پنجاب اسمبلی سے مل کر چلانے کی بجائے وہ بیورو کریسی پر انحصار کر رہے ہیں۔ جس سے پنجاب کے عوام میں حکومت کا اعتماد کم ہوتا جا رہا ہے لہٰذا حکومت کو اپنی ساکھ بجانے کے لئے جمہوری اقدار پر چلتے ہوئے حکومت چلانا ہوگی۔ ذرائع کا یہ

بھی کہنا ہے کہ وفد نے وزایراعلیٰ پنجاب پر جہانگیر ترین اور ان کے صاحبزادے علی ترین پر عائد مقدمات کے حوالے سے بھی تبادلہ خیال کیا جس پر وزیراعلیٰ پنجاب نے جہانگیر ترین گروپ کے وفد کو یقین دہانی کروائی کے وہ ان کے تحفظات اور مطالبات وزیراعظم تک پہنچائیں گے۔ وزیراعلیٰ پنجاب کا یہ بھی کہنا تھا کہ وفاقی یا صوبائی حکومت اپنے حمایت یافتہ اراکان اسمبلی کے خلاف انتقامی کارروائیوں کا سوچ بھی نہیں سکتی۔ بعد ازاں وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے وفد کے اعزاز میں ایک پرتکلف ظہرانہ بھی دیا

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.