بھارت میں کورونا کے سبب ہر طرف خوف کے سائے نظرآنے لگے برطانیہ نے بھی منہ موڑ لیا

لندن ٗدہلی(این این آئی)برطانوی وزیر صحت میٹ ہینکاک نے کہا ہے کہ فائزر بائیو ٹیک ویکسین کی 6 کروڑ اضافی ڈوز کا آرڈر دے دیا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطاانہوں نے کہا کہ بھارت سے آنے والی تصاویر دیکھ کر دکھ ہوتا ہے، بھارت کو دینے کے لیے فی الحال اضافی ویکسین دستیاب نہیں۔برطانوی وزیر صحت

نے کہا کہ موسم سرما سے قبل شہریوں کو کورونا سے بچاو کی ویکسین کی دوسری ڈوز دے دی جائے گی، ویکسین کی ایک ڈوز گھر میں وائرس پھیلنے کا خطرہ نصف کردیتی ہے۔میٹ ہینکاک کا کہنا تھا کہ ویکسین کے نتائج حوصلہ افزا ہیں، ویکسین ہی وبا سے نکلنے کا راستہ ہے، کورونا وبا سے متعلق ابھی احتیاط جاری رکھیں۔علاوہ ازیں برطانیہ میں کی گئی نئی تحقیق کے مطابق کورونا ویکسین کی ایک ہی خوراک سے وائرس منتقلی کا امکان نصف ہو جاتا ہے، انگلینڈ کے ہیلتھ سیکریٹری نے تحقیق کے نتائج کو شاندار خبر قرار دے دیا۔دریں اثنابھارت میں کورونا وائرس کے سبب ہر طرف خوف کے سائے نظر آنے لگے، اموات کی بڑھتی تعداد نے لوگوں کو غیر یقینی کی صورتحال میں ڈال دیا۔بھارتی ٹی وی کے مطابق مریضوں کی تعداد بڑھنے پر ایمبولینسیں کم پڑ گئیں، آندھرا پردیش میں ایمبولینس نہ ملنے پر بیٹے کو آخری رسومات کیلیے ماں کی لاش بائیک پر لے جانا پڑی۔مہاراشٹرا کے ایک علاقے میں بائیس لاشوں کو ایک ہی ایمبولینس میں ڈال کر آخری رسومات کیلئے منتقل کیا گیا۔ جس پر عوام نے حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا، مہاراشٹرا میں ویکسین بھی کم پڑنے لگی۔مرکزی ویکیسین سینٹر میں ویکسین نہ ملنے پر لوگوں نے احتجاج کیا۔ایک دن میں کورونا کے 3 لاکھ 60 ہزار نئے مریض سامنے آگئے، جبکہ مزید 3 ہزار 293 اموات ہوگئیں، جس کے بعد مرنے والوں کی مجموعی تعداد 2 لاکھ سے زیادہ ہوگئی۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *