کرونا وائرس کا خوف بھارت کے امیر ترین لوگ بھی ملک چھوڑنے لگے ہزاروں پائونڈ دیکر نجی طیاروں کے ذریعے برطانیہ چلے گئے

لندن، ممبئی ( آن لائن، این این آئی ) بھارت میں کورونا کے بڑھتے کیسز کے باعث مالدار افراد ہزاروں پونڈز دے کر نجی طیاروں کے ذریعے ملک سے چلے گئے۔غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق بھارت میں کورونا کے خطرناک حد تک اضافے کے بعد کئی افراد ملک چھوڑ گئے جبکہ دیگر ملکوں کی جانب سے بھارتی پروازوں پر پابندی کے بعد بھارت کے

امیر ترین لوگ نجی طیاروں کے ذریعے برطانیہ پہنچ گئے۔بھارت سے اآنے والے کئی نجی طیاروں کو برطانیہ میں اترنے کی اجازت نہیں ملے۔ذرائع کے مطابق سفری پابندیوں کے بعد بھارت سے آنے والے تقریباً 8 نجی طیاروں کو برطانیہ میں اترنے کی اجازت ملی جو تقریباً 70 ہزار پونڈ فی طیارے کی قیمت ادا کر کے پہنچے۔ جن میں سے چار ممبئی، تین دہلی اور ایک پرواز احمد اآباد سے اآئی۔اس سے قبل 22 اپریل کو بھارت سے لندن کے لیے تقریبا 300 ٹکٹ فروخت ہوئے جنہیں برطانیہ کی سفری پابندیوں کے وجہ سے واپس کر دیا گیا۔ یہ ٹکٹ 11 سو پونڈ فی سیٹ کے حساب سے فروخت کیے گئے تھے۔دوسری جانب بھارتی ریاست مہاشٹرا کی پولیس نے کرونا لاک ڈائون کی خلاف ورزی کرنے والوں کو سرعام سزا دینا شروع کردی۔میڈیارپورٹس کے مطابق کرونا کی بگڑتی صورت حال کے بعد زیادہ متاثر ہونے والی ریاست کی حکومتوں نے سخت لاک ڈائون نافذ کرنے کا اعلان کیا۔ مہارشٹرا کی ریاست بھی ان ریاستوں میں شامل ہیں جہاں

صورت حال گھمبیر ہوچکی ہے۔ریاست مہارشٹرا کی حکومت نے تمام علاقوں میں سخت لاک ڈان کے نفاذ کے ساتھ رات کے وقت کرفیو کا اعلان کیا ہے۔ مقامی حکومت نے لاک ڈان کی خلاف ورزی کرنے والے شہریوں کو سرعام سزا دینے کا اختیار پولیس کو تفویض کردیا۔انٹرنیٹ پر

وائرل ہونے والی ویڈیو ریاست مہاشٹرا کے علاقے مندسور کی ہے، جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ پولیس اہلکاروں نے گشت کے دوران سڑک پر گھومنے والے افراد کی پھینٹی لگائی اور انہیں سڑک پر روک کر سزائیں بھی دیں۔پولیس اہلکاروں نے سڑک پر گھومنے والے افراد کا تعاقب کیا اور ان کی باز پرس بھی کی۔ جن لوگوں نے گھروں سے باہر نکلنے کی کوئی مناسب وجہ بیان نہیں کی تو انہیں سڑک پر اٹھک بیٹھک اور مرغا بنانے کی سزا دی گئی۔اہلکاروں نے سزا دینے کے کچھ دیر بعد نوجوانوں کو تاکید کر کے چھوڑا کے اب وہ گھروں میں جاکر بیٹھیں اور لاک ڈان کی خلاف ورزی نہ کریں۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *