وزارت منصوبہ بندی میں تعیناتیوں کیلئے میرٹ کی کھلی خلاف ورزی ایک ایک آسامی کے لیے لاکھوں روپے وصول

اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک )روزنامہ جنگ میں تنویر ہاشمی کی خبر کے مطابق وزارت منصوبہ بندی میں اسسٹنٹ ، سٹینو ٹائپسٹ ، اپر ڈویژن کلرک اور لوئر ڈویژن کلرک کی درجنوں آسامیوں پر تعیناتیوں کے لیے میرٹکی کھلی خلاف ورزی کرتے ہوئے امیدواروں سےلاکھوں روپے فی آسامی طلب کیے گئے،وفاقی وزیر منصوبہ بندی و ترقی اسد عمر نے علم میں آنے پرفوری نوٹس لیتے ہوئے تعیناتیوں کو روک کر انکوائری کمیٹی قائم کرنے کی ہدایت کردی ،وزارت منصوبہ بندی کے معتبر ذرائع کے مطابق دسمبر میں وزارت منصوبہ بندی ، ترقی و اصلاحات میں گریڈ15کے اسسٹنٹ کے عہدے کےلیے11آسامیوں ،

سٹینوٹائپسٹ کی 31آسامیوں ، یو ڈی سی کی 3اور ایل ڈی سی کی 9آسامیوں پر بھرتی کےلیے دسمبر میں اشتہار دیا گیا تھا جس کے 14مارچ کو ٹیسٹ ہوئے ، ٹیسٹ کے بعد میرٹ کو مدنظر رکھے بغیر ان امیدواروں کی فہرست مرتب کی گئی جو افسران کے قریبی رشتہ دار ہیں یا پھر مبینہ طور پر لاکھوں روپے رشوت طلب کی گئی۔واضح رہےکہ اس سے پہلے بھی ایسی شکایات سامنے آ چکی ہیں کہ سرکاری نوکریوں کےلیے رشوت وصول کی جاتی ہے حالیہ کیس تحریک انصاف کی حکومت کے لیے کسی چیلنج سے کم نہیں

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.