مریم نواز شریف کی نیب پیشی ، پیپلز پارٹی ریلی میں شریک ہو گی یا نہیں ؟ پی پی کا بڑا اعلان

اسلام آباد (آن لائن/این این آئی) پاکستان پیپلز پارٹی نے پی ڈی ایم کے فیصلے کے مطابق 26 مارچ کو مسلم لیگ ن کی رہنما مریم نواز کی نیب میں پیشی کی ریلی میں بھر پور شرکت کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے اس حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے پاکستان پیپلز پارٹی کے صوبائی صدر و سابق وفاقی وزیر قمر زمان کائرہ نے کہا ہے کہ کارکن بھر پور تیاری کیساتھ ریلی میں شرکت کے لیے

پہنچیں گے26مارچ کی صبح نیب آفس کے باہر پیپلز پارٹی کے قافلے کی خود قیادت کرونگا انہوں نے کہا کہ سنٹرل پنجاب بھر کے کارکنوں اور رہنماوں کو اپنی شرکت یقینی بنانے کی ہدایت کی گئی ہے۔‎ ۔ دوسری جانب مریم نواز کی 26 مارچ کو نیب لاہور پیشی کا معاملہ، پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی ہدایت پر تمام پارٹیوں کی سنئیر قیادت بھی نیب لاہور پہنچیں گی ۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہاکہ جے یوآئی کی جانب سے سینیٹر مولانا عبدالغفور حیدری، پارلیمانی لیڈر مولانا اسعد محمود نیب لاہور پہنچیں گے ،جے یوآئی نے مشاورت کے بعد ن لیگ کو ناموں سے آگاہ کردیا ،جے یوآئی نے کارکنان کو بھی 26 مارچ کو نیب لاہور پہنچنے کی ہدایت کردی، دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ (ن )کے رہنما محمد زبیر نے مسلم لیگ ن کی نائب صدر سے متعلق کہا ہے کہ مریم نواز نے نوازشریف کا بیانیہ پوری طاقت کے ساتھ زندہ رکھا ہوا ہے، مریم نواز کی مقبولیت ہی سلطنت عمرانیہ کے لیے سب سے بڑا خطرہ ہے۔محمد زبیر نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ مریم نواز، نوازشریف اور مسلم لیگ ن کا فخر ہیں، ایک دفعہ پھر جھوٹا، بے بنیاد اور کھوکھلا سیاسی کیس بنانے کی بھونڈی کوشش ہے، نیب تحریک انصاف کا احتساب ونگ بن چکا۔محمد زبیر نے کہا ہے کہ

نیب نیازی گٹھ جوڑ کو عمران خان کی آٹا، چینی، بجلی، گیس، دوائی چوری نظر نہیں آتی، نیب نیازی گٹھ جوڑ کو بی آرٹی، مالم جبہ، بلین ٹری سونامی، ہیلی کاپٹر کیس میں ڈاکا نظر نہیں آتا ہے۔انہوں نے کہا کہ نیب خود پرامن احتجاج کوسیاسی پریس ریلیز نکال کر اشتعال پھیلا رہا ہے، نیب کی شفافیت اور غیر جانبداری اب سوالیہ نشان بن چکی ہے۔محمد زبیر نے کہا کہ سیاسی طلبی کا جواب ایک پر

امن سیاسی احتجاج سے دیا جا رہا ہے۔واضح رہے کہ مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کی 26 مارچ کو نیب پیشی کے معاملے پر پنجاب حکومت نے نیب لاہور کی درخواست منظور کرتے ہوئے نیب آفس کو ریڈ زون قرار دینے کی منظوری دے دی۔ذرائع کے مطابق پنجاب حکومت کی جانب سے 25 اور 26 مارچ 2 روز کے لئے رینجرز، پولیس نیب آفس اور گردونواح پر تعینات کرنے کی منظوری دی گئی۔ پنجاب حکومت کی جانب رینجرز کی خدمات لینے کے لئے وفاقی وزارت داخلہ کو خط لکھ دیا گیا۔

وزیر قانون پنجاب راجہ بشارت نے کہا ہے کہ کسی کو قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی جائے گی، امن و امان کی صورتحال کو خراب کرنے والوں کے خلاف سخت ایکشن ہوگا، کوررونا ایس او پیز کے خلاف ورزی کرنے کی کسی کو اجازت نہیں دی جاسکتی۔خیال رہے نیب لاہور کی جانب سے پنجاب حکومت کو درخواست دی گئی، جس میں نیب کو ریڈ زون قرار دینے، رینجر اور پولیس تعینات کرنے کی درخواست کی گئی تھی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.