مریم نواز کی پیشی،نیب آفس کو ریڈ زون قرار دینے کی منظوری دے دی گئی

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک /آن لائن)پاکستان مسلم لیگ نواز کی نائب صدر مریم نواز کی 26 مارچ کی پیشی کے موقع پر پنجاب حکومت نے قومی احتساب بیورو (نیب) لاہور آفس کو ریڈ زون قرار دینے کی منظوری دے دی۔ذرائع کے مطابق صوبائی حکومت نے 2 روز کے لیے رینجرز اور پولیس نیب آفس اور گردونواح میں تعینات کرنیکی منظوری دے دی۔نجی ٹی وی ہم نیوز کے مطابق

ذرائع کے مطابق محکمہ داخلہ پنجاب نے رینجرز کی خدمات لینےکیلئے وفاقی وزارت داخلہ کو خط لکھ دیا۔محکمہ داخلہ کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ کسی کو قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ امن وامان کی صورتحال خراب کرنے والوں کے خلاف سخت ایکشن ہوگا۔محکمہ داخلہ پنجاب کے مطابق کوررونا ایس او پیز کی خلاف ورزی کرنے کی کسی کو اجازت نہیں دی جاسکتی ہے۔قبل ازیں پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر اور سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز کی 26 مارچ کو نیب لاہور آفس پیشی کے موقع پر ان کی نیب کے ہاتھوں گرفتاری کا کوئی امکان نہیں۔ نیب نے مریم نواز کو محض لاہور ہائیکورٹ کے حکم کی روشنی میں طلب کیا ہے۔ جہاں نیب کی تفتیشی ٹیم مریم نواز سے چودھری شوگر ملز اور جاتی امراء اراضی کیس کے حوالے سے سوالات کرے گی۔ بتایا گیا ہے کہ لاہور ہائیکورٹ نے مریم نواز سے نیب لاہور کی جانب سے دائر کردہ درخواست منسوخی ضمانت کے حوالے سے 7 اپریل کو جواب طلب کر رکھا ہے۔دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر اور سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز کی 26 مارچ کو نیب آفس پیشی کے موقع پر ان سے اظہار یکجہتی کرنے کے لئے پی ڈی ایم میں شامل سیاسی جماعتوں کے 10 ہزار کارکنان اور رہنما نیب آفس پہنچیں گے۔ اس حوالے سے پاکستان مسلم لیگ ن کے ذرائع کا کہنا ہے کہ

لاہور کے 30 صوبائی حلقوں سے 6 ہزار (ن) لیگی کارکنان مریم نواز سے اظہار یکجہتی کے لئے نیب آفس پہنچیں گے اور اس سلسلے میں مریم نواز نے لاہور سے تعلق رکھنے والے تمام اراکین صوبائی اور قومی اسمبلی سمیت پارٹی ٹکٹ ہولڈرز کو اپنے ہمراہ دو دو سو کارکنان لانے کا ٹارگٹ سونپ دیا ہے۔ یہ بھی بتایا گیا ہے کہ 26 مارچ کو پاکستان مسلم لیگ (ن) کے دیگر ونگ بھی جن میں

لائرز ونگ، تاجر ونگ، لیبر ونگ، یوتھ ونگ سمیت دیگر ونگ شامل ہیں کو بھی اپنے ہمراہ کارکنان لانے کا ٹاسک سونپ دیا ہے۔ علاوہ ازیں پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کی 26 مارچ کو نیب آفس پیشی کے حوالے سے حکمت عملی طے کرنے کے لئے پاکستان مسلم لیگ (ن) نے ایک مشاورتی اجلاس کل طلب کرلیا ہے۔ اپنی صدارت میں ہونے والے اس اجلاس میں نیب آفس پیشی کے حوالے سے حکمت عملی کو حتمی شکل دی جائے گی اور اجلاس میں فیصلہ کیا جائے گا کہ پی ڈی ایم میں

شامل جماعتوں کے کون کون سے رہنما مریم نواز کے ہمراہ نیب آفس جائیں گے۔ یہ بھی بتایا گیا ہے کہ مریم نواز کی نیب آفس پیشی کے موقع پر جاتی امراء سے ٹھوکر نیاز بیگ تک نکالی جانے والی ورکرز ریلی کے روٹ پر 3، 4 مقامات پر استقبالیہ کیمپ لگائے جائیں گے۔ اجلاس میں فیصلہ کیا جائے گا کہ شہر کے کن کن حصوں سے ورکروں کے جلوس جاتی امراء پہنچیں اور کون کون سے جلوس براہ راست ٹھوکر نیاز بیگ پہنچیں گے۔دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور اپوزیشن لیڈر پنجاب

اسمبلی حمزہ شہباز شریف اپنی کزن مریم نواز کی 26 مارچ کو نیب آفس پیشی کے موقع پر ان سے اظہار یکجہتی کرنے کے لئے ماڈل ٹائون سے پاکستان مسلم لیگ (ن) یوتھ ونگ کے کارکنوں کی ایک ریلی کی قیادت کرتے ہوئے ٹھوکر نیاز بیگ جائیں گے۔ لیگی ذرائع کا کہنا ہے کہ حمزہ شہباز کے ہمراہ پنجاب اسمبلی کے بعض (ن) لیگی ارکان بھی جائیں گے جو مشترکہ طور پر ریلی کی قیادت کریں گے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.