ڈاکٹر ہمایوں مہمند نے استعفیٰ دیدیا

اسلام آباد(این این آئی، آن لائن)ایم ٹی آئی آرڈیننس کے تحت پمز بورڈ آف گورننس کے چیئرمین ڈاکٹر ہمایوں مہمند نے عہدے سے استعفیٰ دے دیا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق ڈاکٹر ہمایوں نے اپنا استعفیٰ سیکرٹری ہیلتھ کو بھیج دیا۔ ڈاکٹر ہمایوں مہمند نے کہاکہ میں تحریک انصاف کی جانب سے

سینیٹر منتخب ہوا ہوں، آئینی ذمہ داری اور سینٹ میں مصروفیات کے باعث استعفیٰ دے رہا ہوں، ہیلتھ سیکٹر کی بہتری کے لئے میرا آپ کے ساتھ کام تجربہ شاندار رہا ۔ڈاکٹر ہمایوں ایم ٹی آئی آرڈیننس کے تحت پمز بورڈ آف گورننس کے چیئرمین تعینات تھے،پمز ملازمین ایم ٹی آئی آرڈیننس اور ڈاکٹر ہمایوں کی تعیناتی کے خلاف اڑھائی ماہ تک سراپا احتجاج رہے۔یاد رہے کہ پیپلزپارٹی کی جانب سے پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسزسربراہ کی تعیناتی کو سفارش اور اقربا پروری قرار دئیے جانے پر وزیراطلاعات سینیٹر شبلی فراز اور سینیٹر مصطفی نوازکھوکھر کے درمیان شدید جھڑپ وتلخ کلامی بھی ہوئی تھی،ہاتھا پائی کی نوبت آنے سے قبل اینکرپرسن نے معاملہ رفع دفع کرایا۔تفصیلات کے مطابق پی پی پی کے رہنما مصطفی نوازکھوکھر نے نجی ٹی وی پروگرام میں بتایا کہ پمز کا سربراہ ایسے شخص کو لگایا گیا ہے جس نے عمران خان کا ہیئر ٹرانسپلانٹ کیا ہے۔ جس پر شبلی فراز بھڑک اٹھے اور انہوں نے کہا کہ یہ تقرری

میرٹ پر کی گئی ہے۔جس پر دونوں رہنماں کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا۔شبلی فراز نے کہا کہ آپ نے ذاتی حملہ کرکے انتہائی گھٹیا کام کیا ہے۔مصطفی نواز کھوکھرنے کہا کہ میں آپ کا بہت احترام کرتا ہوں اس وجہ سے چپ ہوں ورنہ نتائج اچھے نہ ہوتے۔جس پر شبلی فراز نے کہا کہ میں آپ کو بتا دوں گا۔تو مصطفی نوازکھوکھر نے کہا کہ میں موقع پر موجود ہوں،جو کرنا ہے کرلو۔اس سے قبل کہ تلخ کلامی مزید بڑھتی اینکرپرسن نے معاملہ رفع دفع کرا دیا ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.