حکومت کے آلہ کار بنے ہوئے سول افسران کی فہرستوں کی تیاری پر کام جاری، ن لیگ کا نیب قانون بارے بھی حیرت انگیز فیصلہ

لاہور(این این آئی) پاکستان مسلم لیگ(ن) کے رہنماؤں نے کہاہے جو سول افسران حکومت کے آلہ کاربنے ہوئے ہیں وہ ہمارے ریڈار پر ہیں اور ان کی فہرستیں بنارہے ہیں،عمران خان جس ٹرانسپرنسی کی دستاویزات ہاتھ میں پکڑ کر ہمارے خلاف لہراتے تھے اسی نے ان کا منہ کالا کردیا ہے،حکمرانوں نے کرپشن کی پُڑیا بیچنے کی بہت

کوشش کی لیکن کوئی ان کاچورن خریدنے کیلئے تیار نہیں،اب نیب کے قانون کونہیں بدلناچاہیے کیونکہ ہم نے اسے بھگت لیا ہے اور اب ان کی باری ہے وہ اسے بھگتیں،پی ڈی ایم کے چار فروری کو ہونے والے سربراہی اجلاس میں آئندہ کی حکمت پر غورکیا جائے گا،حکومت کو ہٹانے کے لئے ہر آئینی راستہ اختیار کریں گے،(ن) لیگ کا نشانہ حساس ادارے نہیں،ایسے واقعات ہوئے جس پر بات کی گئی،الیکشن سیاسی حریف کے ساتھ ہوگا ایسا گروہ جو ڈکٹیٹرں والی حرکتیں کرے گا تو کیسے وقت دے کر ریاست کو برباد کرنے کا وقت دیں،وقت آئے گا نہ این آر او دیں گے نہ بھاگنے دیں گے۔ان خیالات کا اظہارمسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنماخواجہ سعد رفیق،سردارایاز صادق، عطا اللہ تارڑ اورسیالکوٹ کے سابق میئر چوہدری توحید اختر نے ماڈل ٹاؤن سیکرٹریٹ میں پریس کانفرنس ہوئے کیا۔ خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ وردی میں پولیس کے افسران کو ضمنی انتخابات میں غنڈہ گردی کیلئے دوسرے شہروں سے منگوایاگیا ہے،این اے 75سے امیدوار کے بھائی عطا شاہ کو گرفتارکرکے تھانوں میں گھمایاگیا پھر ان پر منشیات ڈالنے کی کوشش کی گئی،رسوائے زمانہ وردی والا غنڈہ گوجرانوالہ کاڈی ایس پی سارے کھیل کا مرکزی کردار ہے،ظاہر ے شاہ کے بیٹوں کے ساتھ پولیس نے نامناسب رویہ اختیار کیا، ان پر تھانے میں تشددکیا

گیا،یہ جھوٹامقدمہ تھااسی لئے عدالت نے اگلے ہی روز ضمانت پر رہائی دیدی، واقعہ کے خلاف قانونی چارہ جوئی کریں گے،فوجداری مقدمہ درج کروائیں گے،حکومت کے آلہ کاربننے والے افسران ہمارے ریڈار پر ہیں ہم ان کی فہرستیں بنا رہے ہیں، بے گناہوں کے ساتھ ظلم برداشت نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب میں سکھا شاہی جاری

ہے،جو مسلم لیگ (ن) کے ساتھ کھڑاہے اسے سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہاہے،کھوکھر برادران کو دھمکیاں دی گئیں جب وہ نہیں ٹوٹے تو گھر گرادئیے گئے،ہم وہاں گئے تو ہمیں آگے جانے سے روکا گیا،دھکے دئیے گئے،عدالت نے انہیں انصاف دیا اور کارروائی کو روکا۔انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے کرپشن کی پُڑیا

بیچنے کی کوشش کی جا رہی جو اب بک نہیں رہی، نا اہلی،کرپشن اقربا پروری اور نو گورننس کا بوجھ اپوزیشن پر ڈالنے کی کوشش کی جارہی ہے۔سیالکوٹ کے سابق مئیر کے کروڑوں روپے کی پراپرٹی کو نقصان پہنچایاگیا، عمران خان اور ان کے ساتھی دودھ کے دھلے ہوئے ہیں؟جس ٹرانسپرنسی انٹر نیشنل کی رپورٹس کو اٹھاکر یہ

ہماری حکومت کے خلاف باتیں کرتے تھے اس ٹرانسپرنسی انٹر نیشنل نے ان کا منہ کالا کر دیاہے، آپ نے کرپشن کرپشن کی رٹ لگائی اب آپ اپنا حساب دیں، آپ نے نوازشریف اور (ن) لیگ کے بغض میں ملک کو تباہ کر دیا ہے، آپ مسلم لیگ (ن) کے ایک شخص کو توڑ نہیں سکے،کوئی نظریے سے نہیں ہٹا،اب آمرانہ رویہ نہیں چلے

گا،لوگوں کوغربت اور مسائل سے نکالنے پر توجہ دو۔سعدرفیق نے کہا کہ آپ سے اپوزیشن ختم نہیں ہوگی کیونکہ آپ بد نیت ہو،اللہ کی لاٹھی کا کیا کروگے، جو بھی ظلم کرے گا وہ اپنے انجام کو پہنچے گا، ہم نے ملک میں چار مارشل لا ء دیکھے لیکن،سول ڈکٹیٹر بھی دیکھے لیکن آج کے دور جیسی آمرانہ روش نہیں دیکھی، تم (ن) لیگ اور

پی ڈی ایم کو کارنر نہیں کر رہے،اصلاح کے نام پر انتشار اور فساد برپا کر رہے ہو، تم نے ایک نسل میں گالی کی سیاست کو متعارف کرایا،ریاستی اداروں کا بد ترین استعمال کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سول سرونٹس کی دیانت داری کسی کام نہیں آئے گی،سول سرونٹس دیانت دار ہیں تو ظلم کرنے کے احکامات نہ مانیں،بعض افسران دیانتدار

ہیں لیکن اپنی ناک کے نیچے ظلم ہونے پر بیگانہ ہو جاتے ہیں ایسا کیوں کررہے ہو،یہاں بشیر میمن جیسے لوگ بھی ہیں جو عزت کے ساتھ ریٹائرڈ ہو جاتے ہیں، یہ دور زیادہ دیر نہیں چلے گا،جب کوئی حکمران ظلم کی انتہا کرتاہے تو ظلم ختم ہونے جارہا ہوتاہے۔ انہوں نے کہا کہ حکمرانوں کو ریلوے کو تباہ کر دیا ہے،ہم نے اتنی مشکل سے ای

ٹکٹنگ کا سسٹم بنایا، یہ ای سسٹم کانظام تو چلا نہیں سکے اور ملک چلائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ حکومتی ایجنڈے میں ہے کہ اتنا جھوٹ بولو کہ سچ کا گمان ہونے لگے، اداروں اور اپوزیشن کی لڑائی کروا کر رکھو اگر تناؤ رہے گا تو اقتدار کا وقت پورا ہوجائے گا۔ا نہوں نے کہا کہ عمران خان اور ساتھیوں کی خواہش ہے لانگ مارچ لے کر آ

جائیں،پریشان نہ ہوں آپ کی سلیکٹڈ کی مدت پوری نہ ہو اس پر پریشانی نہیں،منتخب وزیر اعظم کی مدت پوری ہو سلیکٹڈ کی نہیں ہونی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ چار فروری کو پی ڈی ایم کی میٹنگ ہوگی،حکومت کو گھر بھیجنے کیلئے ہرآئینی طریقہ اختیار کریں گے، (ن) لیگ کا نشانہ حساس ادارے نہیں،ایسے واقعات ہوئے جس پر بات کی

گئی،الیکشن سیاسی حریف کے ساتھ ہوگا ایسا گروہ جو ڈکٹیٹرں والی حرکتیں کرے گا تو کیسے وقت دے کر ریاست کو برباد کرنے کا وقت دیں۔ انہوں نے کہا کہ نئے پاکسان میں نحوس آ گئی ہے اور ہر چیز تباہی کے دہانے پر پہنچ گئی ہے۔ سردارایازصادق نے کہا کہ ٹرانسپرنسی انٹر نیشنل نے موجودہ حکومت کو کرپٹ ترین حکومت کہہ دیا

ہے،اب بہانے نہیں چلیں گے،ثاقب نثار نے عمران خان کے بنی گالہ کو چھوڑ کرباقی سب کو غلط کہہ دیا،بنی گالہ میں سکیم میں ایک شخص جان کھو بیٹھا، عمران خان ایک طرف کہتے ہیں فیروز والا کی زمین خریدی پھر کہتے تحفے میں ملی،بتائیں زمان پارک پر کروڑوں روپے کا خرچ کس نے کیا،اس کا ٹھیکیدار کون تھا۔انہوں نے کہا کہ

پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کو پہلی بار کام سے روکا گیا ہے،براڈ شیٹ کیس پر بات نہیں کرنے دی جا رہی اسے ایجنڈے پر نہیں لینے دیا جارہا، اب تو ایک آڈٹ پیرا بھی آ گیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ (ن) لیگ اب نیب کے قانون کو تبدیل نہیں کرنا چاہتی، ہم تو بھگت چکے ہیں اب یہ بھگتیں گے۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں کی ذاتی سکیموں میں ظلم و ستم کرتے

ہیں،جنہوں نے ظلم کیا انہیں بتاناچاہتے ہیں کہ اللہ کی لاٹھی بے آوازہے اور سب دیکھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ نوازشریف کے ساتھیوں کو ذہنی اور جسمانی تشددکا نشانہ بنایا گیا،مالی نقصان پہنچایاگیا لیکن کسی کے قدم نہیں ڈگمگائے،سب نواز شریف کے ساتھ کھڑے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جو افسر ظلم کا ساتھ دے رہے ہیں ہم اتنے طاقتور

نہیں کہ ظالم سے بدلہ لے سکیں لیکن اللہ ضرور لے گا۔عطا اللہ تارڑ نے کہا کہ قبضہ مافیا کا آغاز پی ٹی آئی سے ہوا، مرا داکبر نامی شخص شہزاد اکبر کا سگا بھائی ہے جو سرکاری گاڑیوں کے ہمراہ راولپنڈی میں اراضی پر قبضہ کرنے گیا اور اس کا وہاں پر وفاقی وزیر میاں محمد سومروکے بھتیجے سے سامنا ہو گیا،اس کیس میں چار

افسران کا تبادلہ کیا گیا۔ شہزاداکبرصاحب آپ نے یہ بھی نہیں بتایا کہ آپ لندن میں ایک گاڑی میں کونسی دستاویزات لے کر جارہے تھے،لندن میں جا کر کیا معاملات سیٹل کئے گئے،کس کی گاڑی سے دستاویزات کو کہاں پہنچایا گیا۔عمران خان افسر شاہی کو ذاتی مفادات کیلئے استعمال کرنا چاہتے ہیں، عمران خان نے سی سی پی او کے انٹرویو

کے دوران بہنوئی کے پلاٹ کے متعلق کہا، شہزاد اکبر نحوست سے بھرپور ہیں ان کا کیرئیر نیب سے شروع ہوتاہے اور براڈ شیٹ کیس تک پہنچتاہے، نوازشریف کے بغض میں نیب نے ملین ڈالرز لندن میں ہاکستانی ہائی کمیشن کے اکاؤنٹ میں خفیہ طریقے سے منتقل کئے۔انہوں نے کہاکہ شہزاد اکبر سپین چلے جائیں گے لیکن آپ کو

نہیں چھوڑیں گے۔انہوں نے کہا کہ ایف آئی اے اور اینٹی کرپشن کا غیر قانونی معاہدہ کروایاگیا، لوگوں کو ذہنی اذیت دی جارہی ہے، شہزاد اکبر آپ کا نام ای سی ایل میں ہوگا آپ کوچھپنے کی جگہ نہیں ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ تاریخ میں پہلی بار ہواہے کہ کسی ملک کے سفارت خانہ کے اکاؤنٹس کومنجمد کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ واضح پیغام

ہے کہ ہم ایک ایک بات نوٹ کررہے ہیں جو جو سرکاری ملازم سیاسی انتقام میں آلہ کار بننے میں ملوث ہیں ان کے خلاف عدالتوں میں استغاثہ دائر کرنے جارہے ہیں، چیف سیکرٹری جواد رفیق ملک سن لیں اتنا ظلم کریں جتنا برداشت کر سکیں، شہبازشریف اور حمزہ شہباز جیل میں بے گناہ سزا کاٹ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کا ملکی ترقی اور کشمیر سے کوئی تعلق نہیں،ملک جب توہم پرستی پر چلے گا تو ملک کانقصان ہی ہوگا، پنجاب

کی بیوروکریسی کی لسٹیں بنا چکے ہیں، وقت آئے گا نہ این آر او دیں گے نہ بھاگنے دیں گے۔سیالکوٹ کے سابقہ مئیر چوہدری توحید اختر نے کہا کہ کینٹ ہاؤسنگ سوسائٹی 2017ء میں منظور ہوئی لیکن مسلم لیگ (ن) اورخواجہ آصف کے ساتھ کھڑاہونے کی سزا دی گئی،ہاؤسنگ سکیم کے کمیونٹی سنٹر پر ہلہ بولا گیا اور عمارتیں گرا دی گئیں،(ن) لیگ اور اجہ آصف کا ساتھی ہوں لیکن کسی بھی صورت میں یہ تعلق قائم رہے گا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.