اہم حکومتی اتحادی جماعت نے ضمنی الیکشن میں تحریک انصاف کے مدمقابل امیدوار کھڑا کر دیا، دستبردار کرانے سے انکاری

کراچی (این این آئی)ایم کیوایم نے ملیر کے حلقہ پی ایس 88 کے ضمنی الیکشن میں اپنا امیدوار دستبردار کرانے سے انکار کردیاہے۔تفصیلات کے مطابق کراچی میں ملیر کی نشست پر ضمنی انتخاب ہونے والے ہیں اور اس حلقے میں حکومتی اتحادی جماعت ایم کیو ایم اور تحریک انصاف ایک دوسرے کے آمنے سامنے ہوگئے ہیں، کیوں کہ ایم

کیوایم نے پی ایس 88 ملیر کی نشست پر پی ٹی آئی کے مدمقابل الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا ہے، اور ایم کیوایم نے ملیر ضمنی الیکشن میں اپنی انتخابی مہم کا آغاز کردیا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی نے ایم کیوایم سے ملیر کے ضمنی انتخابات میں اپنے امیدوار کو دستبردار کرانے کی درخواست کی تھی، تاہم ایم کیوایم نے ضمنی الیکشن میں اپنا امیدوار دستبردار کرانے سے انکار کرتے ہوئے موقف پیش کیا ہے کہ ہمارا اتحاد مرکز میں ہے امیدوار دستبردار نہیں کرائیں گے اور پی ٹی آئی نے بھی ہمارے مدمقابل کراچی ضمنی الیکشن میں امیدوار کھڑا کیا تھا۔واضح رہے کہ پی ایس 88 ملیر کی نشست پر ضمنی الیکشن کے لئے پولنگ 16 فروری کو ہوگی، اور اس نشست پر پیپلزپارٹی کے محمد یوسف، ایم کیوایم کے ساجد احمد اور پی ٹی آئی کے جان شیر جونیجو امیدوار ہیں، تاہم اس حلقے میں پی ٹی آئی ایم کیوایم کے الگ الگ امیدواروں سے پیپلزپارٹی کی پوزیشن مستحکم ہے۔دوسری جانب وزیر تعلیم سندھ سعید غنی نے کہا ہے کہ مجھے ایسا لگتا ہے کہ علی زیدی کسی ذہنی دباؤ کا شکار ہیں اور اس وقت وہ نارمل صورتحال میں نہیں ہیں۔ وزیر اعلیٰ سندھ سے پوچھنے کا دعویٰ کرنے والے اس مہا چول وزیر کو پہلے اپنی اس کابینہ اور وزیر اعظم سے چینی، گندم، ادویات، پیٹرول اور ایل این جی گیس پر نااہلی کے باعث اس ملک کے

22 کروڑ عوام کی جیبوں پر ڈالے گئے اربوں روپے پر پوچھنا چاہیے۔ نیب اس وقت حکومت کا آلہء کار بنا ہوا ہے اور جو کوئی اس حکومت کو ٹف ٹائم دیگا وہ اس کے خلاف ریفرنس بنارہے ہیں۔ اسٹیل ملز آج بھی سندھ حکومت لینا چاہتی ہے اور اسے چلانا چاہتی ہے، موجودہ نااہل اور نالائق حکومت کی اس دور میں 42 ارب روپے کا خسارہ

اسٹیل ملز کی مد میں ہوا ہے پہلے وہ ان کا حساب دیں۔ گیس کے کنکشن منقطع کرکے اسٹیل ملز کو تباہ کرنے والوں سے پوچھ گچھ کی بجائے اس کی سزا غریب مزدوروں کو اسٹیل ملز سے نکال کر دی جارہی ہے۔ کراچی پریس کلب جمہوریت کی جہدوجہد میں ملک بھر کی پریس کلبوں کے مقابلے ہمیشہ آگے رہا ہے اور ان کی اس ملک کی جمہوریت کے لئے قربانیوں کو فراموش نہیں کیا جاسکتا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.