جسے اللہ رکھے اُسے کون چکھے، 14 دن سے دبے 11 کان کنوں کو معجزانہ طور پر زندہ نکال لیا گیا

بیجنگ(این این آئی) چین میں تباہ ہونے والی سونے کان کے ملبے تلے دبے 11 کان کنوں کو امدادی کارکنان نے 14 روز بعد بحفاظت نکال لیا۔عالمی میڈیا کے مطابق چین کے صوبے شانڈونگ میں ریسکیو ادارے کے امددی کارکنان سونے کی کان کی 600 میٹر گہرائی میں دبے 11 کان کنوں کو دو ہفتوں بعد بحفاظت نکالنے میں کامیاب

ہوگئے ہیں۔ اس کان میں حادثے کے وقت 22 مزدور موجود تھے۔سرکاری ٹیلی وژن پر کان کنوں کے بحفاطت باہر آنے کے مناظر کو براہ راست دکھایا گیا، 7 کان کن خود چل کر باہر نکلے، 4 مزدوروں کو امدادی کارکن اٹھا کر لائے۔ کان کنوں کی آنکھیں ڈھنپی ہوئی تھیں تاکہ زیر زمین تاریکی میں دو ہفتے گزارنے کے بعد سورج کی روشنی اثر انداز نہ ہو۔کان کنوں کی زیر زمین زندہ موجودگی پر ریسکیو کام کو تیز کیا گیا تھا اور کئی ہفتوں کا کام 3 دن میں کر لیا گیا، کان کنوں کو ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں ان کا طبی معائنہ کیا گیا تاہم حکام نے مزدوروں کی صحت کے بارے میں تفصیلات فراہم نہیں کیں۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق دو ہفتے قبل چینی صوبے شانڈونگ میں واقع سونے کی ایک کان میں نامعلوم وجوہات کی بنا پر دھماکا ہوا تھا اور بائیس کان کن چھ سو میٹر گہری سرنگ میں پھنس کر رہ گئے تھے۔ اس حادثے کے ایک ہفتے بعد امدادی کارکنوں کو یہ معلوم ہوا تھا کہ کئی متاثرہ افراد زیر زمین زندہ ہیں۔ چین میں تباہ ہونے والی سونے کان کے ملبے تلے دبے 11 کان کنوں کو امدادی کارکنان نے 14 روز بعد بحفاظت نکال لیا۔عالمی میڈیا کے مطابق چین کے صوبے شانڈونگ میں ریسکیو ادارے کے امددی کارکنان سونے کی کان کی 600 میٹر گہرائی میں دبے 11 کان کنوں کو دو ہفتوں بعد بحفاظت نکالنے میں کامیاب ہوگئے ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.