عدلیہ مخالف پروگرام چلانے پر نجی ٹی وی کا لائسنس معطل، بھاری جرمانہ ‎‎

اسلام آباد (پ ر )پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) نے بول نیوز کوجاری کردہ لائسنس 30یوم کیلئے معطل کر دیا۔ معطلی کے احکامات بول نیوز کے پروگرام “تجزیہ” جس کے میزبان سمیع ابراہیم ہیں میں مؤرخہ 12 جنوری 2021؁ء کو نشر کردہ پرگرام میں عدلیہ مخالف مواد نشر کیے جانے پر جاری کیے گئے ۔ مذکورہ پرگرام میں میزبان سمیع ابراہیم اور

سینئر رپورٹر میاں داؤد نے عدالتِ عالیہ میں فاضل جج صاحبان کی تقرری اور اس سے متعلق طریقۂ کار(Procedure) کو موضوعِ بحث لاتے ہوئے معزز چیف جسٹس و دیگر فاضل جج صاحبان کے خلاف ہرزہ سرائی کی اور نہایت غیر مناسب اور عامیانہ تبصرہ کیا۔ دونوں صاحبان نے آئینِ پاکستان کی شق 19، شق68اور پیمرا قوانین بشمول ضابطۂ اخلاق 2015ء کی متعدد شقوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے عدالت و فاضل ججوں کے کنڈکٹ کو غیر ضروری طور پر زیرِ بحث لائے۔ پیمرا نے چینل ِ ہٰذاکو 12جنوری 2021؁ء کو جاری شدہ اظہارِوجوہ کے نوٹس کے ذریعے 7یوم میں جواب طلب کیا تھا۔ تاہمذاتی شنوائی کے دوران جو جواب موصول ہوا اُس میں چینل نے ناتو اپنی کوتاہی تسلیم کی اور ناہی عدلیہ مخالف مواد نشر کرنے پر معافی کی درخواست کی، جبکہ چینل نے مؤقف اختیار کرتے ہوئے یہ تسلیم کیا کہ نشر کیا گیا مواد دراصل پیمرا قوانین اور سپریم کورٹ آف پاکستان کے احکامات کی روشنی میں نشر کیا گیا ہے لہٰذا جاری شدہ نوٹس واپس لیا جائے۔ پیمرا نے چینل ہٰذا کو بارہا یہ باور کرانے کی کوشش کی ہے کہ عدلیہ مخالف مواد چلانے سے گریز کریں اور آئین کی شق19میں جن حدود وقیود کا تذکرہ کیا گیا ہے اُن کا احترام کرتے ہوئے اُن پر عملدرآمد یقینی بنائیں۔ اتھارٹی نے 12جنوری2021؁ء کو جاری شدہ اظہارِ وجوہ کے نوٹس پر کاروائی مکمل کرتے ہوئے مؤرخہ 22جنوری2021؁ء کو بول نیوز کو جاری شدہ لائسنس 30یوم کیلئے معطل کر دیا اور چینل پر دس لاکھ جرمانہ بھی عائد کیا۔ اس فیصلے کا اطلاق فوری طور پر ہو گا اور اس ضمن میں تمام کیبل آپریٹرز کو بھی احکامات جاری کر دیئے گئے ہیں کہ بول نیوز کی نشریات فور ی بند کر دی جائیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.