پنجاب میں بلدیاتی الیکشن کروانے کا فیصلہ

لاہور(آن لائن)پنجاب حکومت نے صوبے میں بلدیاتی انتخابات رواں برس ستمبر میں کروانے کا فیصلہ کرلیا، الیکشن کمیشن آف پاکستان کو تاریخ سے آگاہ کردیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق پہلے مرحلے میں صوبے میں ولیج کونسل کے انتخابات کرائے جائیں گے، اس مقصد کے لیے صوبہ پنجاب میں ولیج کونسل کی تعداد 25 ہزارسے کم

کرکے 8 ہزارکرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جب کہ پنجاب میں بلدیاتی انتخابات رواں سال ستمبر تک منعقد کرادیے جائیں گے، حکومت رواں سال مرحلہ واربلدیاتی انتخابات کیانعقاد کویقینی بنائے گی، اس سلسلے میں پنجاب حکومت کی طرف سے بلدیاتی انتخابات کے انعقاد کی تاریخ الیکشن کمیشن کو دے دی گئی ہے۔دوسری جانب سیکرٹری بلدیات، ہاؤسنگ و ٹاؤن پلاننگ سندھ نجم احمد شاہ کا کہنا ہے کہ کے ایم سی سمیت تمام بلدیاتی اداروں کی مالی خود مختاری اور استحکام حکومت سندھ کی اہم ترین ترجیحات میں سے ایک ہے جس کے لئے ہر ممکن وسائل کو بروئے کار لایا جائے گا۔نجم احمد شاہ نے کہا کہ وزیر اعلی سندھ کی منظوری سے کے ایم سی کو 170 ملین کی گرانٹ کا فیصلہ درحقیقت اس بات کا مظہر ہے کہ حکومت سندھ تمام اداروں کی بحالی اور مضبوطی کے لئے کوشاں ہے۔ سیکرٹری بلدیات سندھ کے مطابق کے ایم سی کو موجودہ مالی بحران سے نکالنے کے لئے حکومت سندھ کی جانب سے گرانٹ کی فراہمی سے ملازمین کی تنخواہوں کا مسئلہ حل ہوگا۔ وزیر اعلی سندھ کی جانب سے کے ایم سی کے امور کے حوالے سے قائم کردہ کمیٹی کے رکن سیکرٹری بلدیات نجم احمد شاہ کا مزید کہنا تھا کہ کراچی میٹرو پولیٹن کارپوریشن کو مستقل بنیادوں پر نفع بخش اور مثالی ادارہ بنانے کے لئے سنجیدہ مشاورتی عمل کا آغاز ہوچکا ہے جس کے ثمرات سے عنقریب شہر کے عوام مستفید ہوسکیں گے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.