قانون اندھا ہوتا ہے جھوٹے مقدمے میں 7 سال تک جیل کاٹنے والی 80 سالہ خاتون بیگناہ ثابت

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)جھوٹے مقدمے میں 7 سال تک جیل میں رہنے والی 80 سالہ خاتون بے گناہ ثابت ہوگئی ۔ 7 سال بعد ناکافی ثبوتوں کی بنا پر خاتون کو بردی کردیا گیا ۔ تفصیلات کے مطابق ایک بیگناہ 80سالہ گھریلو ملازمہ نے بغیر

کوئی جرم کیے7 سال قید کی سزا کاٹ لی، عدالت نے رہائی سے چند روز قبل انہیں مقدمے میں ناکافی ثبوتوں کی بنا پر الزام سے بری کردیا۔کوئٹہ کی رہائشی ضعیف خاتون سکینہ رمضان ایک گھریلو ملازمہ تھیں ان کا قصور صرف اتنا تھا کہ وہ اپنے مالک کے کہنے پر اس کا دیا ہوا الیکٹرانک کا سامان لے کر2014میں کراچی آئیں۔ ایئر پورٹ پر کسٹم حکام نے دوران چیکنگ ان کے سامان سے40 کلو گرام چرس برآمد کی تھی، جس کی پاداش میں انسداد منشیات عدالت سے انہیں عمر قید اور دس لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنائی گئی تھی۔لیکن سات سال بعد ناکافی شواہد کی بنیاد پر انہیں رہا کیا جارہا ہے اس جرم میں جو انہوں نے کیا ہی نہیں تھا،سوشل میڈیا پر یہ خبر تیزی سے وائرل ہو رہی ہے ، صارفین نے اس خاتون کیساتھ ہمدردی کا اظہار کیا اور ملک کے نظام عدل پر سوالات اٹھائے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.