آدھے گھنٹے میں استعفیٰ قبول کرو جن 2لیگی اراکین نے استعفے دئیے ابتدا ہی ان سے کی جائے ، وزیر اعظم نے سپیکر کو ہدایات دیدیں

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)وزیراعظم عمران خان اور سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کے درمیان اہم ملاقات ، میڈیا رپورٹس کے مطابق ملاقات میں فیصلہ کیا گیا کہ اپوزیشن کی طرف سے بلیک میل کرنے اور دبائو ڈالنے کی کوششوں کو ہرگز برادشت نہیں کیا جائے گا ۔

استعفے دینے والوں کو تصدیق کیلئے بلایا جائے گا ، تصدیق ہونے پر استعفیٰ 30 منٹ کے اندر قبول ہوجائے گا ، جن 2 اراکین کے استعفے موصول ہوئے ابتدا ان سے ہی کی جائے گی ، اس ضمن میں سپیکر سیکرٹریٹ نے استعفوں کی تصدیق کیلئے اراکین کو خط بھی لکھ دیا جب کہ اس سلسلے میں وزیراعظم نے پارٹی ترجمانوں کو بھی واضح گائیڈلائنز جاری کردی ہیں۔ذرائع کے مطابق سپیکر قومی اسمبلی سے ملاقات میں مطابق وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اپوزیشن کی طرف سے حکومت کو بلیک میل کرنے کیلئے اداروں پر دبائو نہیں ڈالنے دیں گے ، این آر او کیلئے اپوزیشن نے سارے کارڈ کھیل لیے ، پی ڈی ایم نے تو استعفوں کا کہا تھا ، استعفے کہاں ہیں ، اپوزیشن والے اب معاملہ الجھا رہے ہیں۔یادرہے پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کی طرف سے 31 جنوری تک حکومت کو مستعفی ہونے کی ڈیڈلائن دی گئی ہے ، جبکہ پی ڈی ایم میں شامل جماعتوں کے تمام اراکین اسمبلی کو 31دسمبر تک استعفے جمع کرانی کی ہدایات د ی گئی تھیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.