پشاور بی آرٹی منصوبے میں 19ارب 77کروڑکی بے قاعدگیاں آڈیٹر جنرل پاکستان کی رپورٹ میں ہوشربا انکشافات‎

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)پشاور بی آرٹی منصوبے میں 19 ارب 77 کروڑ کی بےقاعدگیاں سامنے آگئیں، جس میں 2 ارب 77 کروڑ کی خلاف ضابطہ ادائیگیاں کی گئیں جبکہ پراجیکٹ کے ڈیزائن میں تبدیلی سے لاگت میں17 ارب روپے کا اضافہ ہوا۔

آڈیٹر جنرل پاکستان کی پشاوربی آرٹی منصوبے سے متعلق جاری کردہ آڈٹ رپورٹ میں پشاور بی آرٹی منصوبے میں اربوں روپے کی بےقاعدگیاں سامنے آئی ہیں۔رپورٹ میں مجموعی طور پر2 ارب77 کروڑ47 لاکھ روپے کی بے قاعدگیوں کا انکشاف ہوا ہے۔ اسی طرح ڈیزائن میں تبدیلی سے لاگت 49 ارب روپے سے بڑھ کر66 ارب تک پہنچ گئی۔ ایڈیشنل چیف سیکرٹری سمیت کئی اعلی افسروں نے1 کروڑ77 لاکھ روپے کی اضافی تنخواہیں بھی وصول کیں۔ مردان اور ایبٹ آباد میں پنک بسوں پر بی آرٹی کے17 لاکھ روپے خرچ کیے گئے۔پرانے تعمیراتی ملبے کے5 کروڑ کی ٹھیکیداروں سے وصولی نہیں ہوئی۔اسی طرح پی سی ون کے 143ملازمین سمیت مزید افراد کو عہدوں پر بھی نوازا گیا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.