جب تمہیں پتہ ہے کہ میں تقریر کر رہا ہوں تویہاں چائے کیوں رکھی؟نوازشریف نے غصہ چائے دینے والے پر نکال دیا

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)مسلم لیگ ن کے قائد سابق وزیر اعظم نواز شریف نے تقریر کے دوران چائے دینے والے کو ڈانٹ پلا دی، انہوں نے کہا کہ جب تمہیں پتا ہےکہ میں تقریر کررہا ہوں تو کیوں چائے یہاں رکھی؟چائے دینے سے پہلے مجھے پوچھ ہی لینا تھا۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف نے لندن سے ویڈیو لنک کے ذریعے لاہور میں ورکرز کنونشن سے خطاب کیا، وہ ابھی تقریر کررہے تھے کہ اس دوران چائے دینے والے کو ڈانٹ دیا کہ چائے دینے سے پہلے مجھے پوچھ تو لینا تھا، ایسے ہی یہاں لاکر رکھ دی، جب تمہیں پتا کہ میں تقریر کررہا ہوں تو کیوں چائے یہاں رکھی؟ تاہم نوازشریف نے چائے کی ایک چُسکی بھی بھری۔کچھ ٹی وی چینل نے ملازم کو بِن دیکھے خبر دی کہ نوازشریف ملازم پر بھڑک اٹھے۔تاہم ویڈیو میں نوازشریف کو دیکھا جاسکتا ہے کہ وہ کس طرح چائے دینے والے کو سمجھا رہے ہیں۔مزید برآں  سابق وزیر اعظم و مسلم لیگ (ن) کے قائد محمد نواز شریف نے ویڈلنک کے ذریعے سوشل میڈیا ورکرز کنونشن سے خطاب کیا۔کنونشن سے مسلم لیگ (ن) کی نائب صد رمریم نواز اور دیگر نے بھی خطاب کیا ۔ اس موقع پر پرویز رشید ، مریم اورنگزیب، عطا اللہ تارڑ، انجینئر خرم دستگیر ، طلال چوہدری، سیف الملوک کھوکھر، افضل

کھوکھر سمیت دیگر بھی موجود تھے۔  نواز شریف نے کہا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ سوشل میڈیا ورکرز نے میرا ،مسلم لیگ (ن) اور مریم نواز کا مان رکھا ،آپ ہماری تحریک میں فرنٹ لائن پر ہیں،جی چاہتا ہے کہ میں آپ کو گلے کے ساتھ لگاوں ، آپ کا جوش و خروش اورولولہ

پاکستان کے روشن مستقبل کی نوید سنا رہا ہے اور آج میں فخر سے کہہ سکتا ہوں کہ مسلم لیگ (ن) کے سوشل میڈیا کسی دوسری جماعت سے کوئی مقابلہ نہیں اور ہماری ٹیم کا کوئی ثانی نہیں ہے ، وہ دن گئے جب سوشل میڈیا کسی اور جماعت کا قلعہ تھا ، مریم نواز اس پر مبارکباد کی

مستحق ہیں جنہوں نے انتھک محنت سے اس کی داغ بیل ڈالی اور آپ نوجوانوں کو ملکی سیاست میں متحرک کرنے میں اہم کردار ادا کیا ۔منزلیں بیشک اونچیں کیوں نہ ہوں لیکن راستے ہمیں قدموں کے نیچے ہوا کرتے ہیں۔ ا نہوں نے کہا کہ غیر جمہوری قوتوں نے آپ کے ووٹ کو عزت دو کے

نعرے سے خوفزدہ ہو کر کنٹرول میڈیا کے ذریعے پراپیگنڈا شروع کر رکھا ہے کہ نواز شریف کا بیانیہ ملک کو کمزور اور دشمنوںکو مضبوط کر رہا ہے ، انہی غیر آئینی طاقتوں نے پاکستان میں آزادی اظہار کا گلہ گھونٹ رکھا ہے ،غریب کا گلہ گھونٹ رکھا ہے ،لوگوں کے روزگار کا گلہ گھونٹ رکھا ہے۔

لوگوں کومہنگائی کی چکی میں پیس کر رکھ دیا ہے، آج جو پچاس ہزار روپے بھی تنخواہ لے رہا ہے وہ کیا کھا رہا ہے ، کیا بچوں کو پڑھا رہا ہے ، کہاں سے بجلی اور گیس کا بل دے رہا ہے۔ کہاں سے اور کیسے گھر کا کرایہ دے رہا ہے ، یہ سوچنے والی باتیں اور دل دہلا دینے والی باتیں ہیں۔

ان کو فکر پڑی ہوئی ہے کہ نواز شریف کا راستہ روکیں، الیکٹرانک میڈیا پر میری تقریر نشر کرنے پر پابندی لگا دی گئی ہے ۔منظم پراپیگنڈے کے تحت سچ کو جھوٹ اور جھوٹ کو سچ ، سیاہ کو سفید اور سفید کو سیاہ کرنے کا کام کر رہے ہیں ،یاد رکھیں اب دنیا بدل چکی ہے ، آج سوشل میڈیا

ذرائع ابلاغ کا موثر اور آزاد پلیٹ فارم کے طور پر سامنے آ چکا ہے ،یہ آپ کی غیر آئینی قانون سازی کے باوجود آپ شکنجے سے آزاد ہے اور خود مختار چینل کی حیثیت اختیار کر چکا ہے ، اب آپ کے جھوٹ کو چھپانا ممکن نہیں رہا ،سوشل میڈیا کے کارکنان جتنا آگے بڑھیں یہ اتنا پیچھے

بھاگیں گے ۔سوشل میڈیا کے دور میں عام آدمی کی سوچ اور آواز کو دبانا ناممکن ہو گیا ہے ۔ آپ میر ے ساتھ وعدہ کریں آپ اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھیں گے جب تک ملک میں حقیقی جمہوریت اور آئین و قانون کی حکمرانی کا سورج طلوع نہیں ہو جاتا۔ انہوں نے کہا کہ یاد رکھیں آپ نے

کبھی تہذیب اور اخلاقیات کا دامن نہیں چھوڑنا ۔ اگر آپ اپنے عزم میں پختہ رہے تو ووت کو عزت دلوانے میں ہم انشا اللہ ضرور سرخرو ہوں گے اور بائیس کروڑ عوام بھی سر خرو ہوں گے ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.