ہمیں این آر او نہیں بلکہ عمران خان سے۔۔۔ اپوزیشن نے وزیر اعظم سے کیا چیزمانگ لی؟

لاہور(این این آئی) پیپلز پارٹی وسطی پنجاب کے صدر قمر زمان کائرہ نے کہا ہے کہ وزیراعظم صاحب ہمیں این آر او نہیں آپ کا استعفیٰ چاہیے،مشرف ہمیں این آر او دینے والا کون تھاہم نے تو اس سے استعفیٰ لیا۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ آپ جتنے چاہو مقدمے درج کرو لاہور کا

جلسہ پوری طاقت سے ہوگا،وزیراعظم اور ان کے ترجمانوں کی بوکھلاہٹ بتا رہی ہے کہ یہ جانے والے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم ڈیلیور کرنے میں ناکام ہوچکے ہیں اب ان کا صرف دھمکیوں پرگزارا ہے،عوام اب نکل آئے ہیں جعلی دھمکیاں اور بدتمیزیاں اب آپ کو بچا نہیں سکتیں۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کی ہر تقریر میں تکبر جھلکتا ہے یہی ان کے زوال کی بڑی نشانی ہے۔دوسری جانب ترجمان پنجاب حکومت مسرت جمشید چیمہ نے کہا ہے کہ لاہور جلسے میں شرکت کی دعوت دینے کیلئے اپنے حلقوں میں جانے والے اراکین اسمبلی کو عوام کے شدید غیض و غضب کا سامنا ہے،کارکنوں نے واضح کہا ہے قومی سلامتی کے ادارے کیخلاف بیانیے کا ساتھ نہیں دیں گے۔ میڈیا کے لئے جاری کئے گئے اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ کارکنان برملا کہہ رہے ہیں بیرون ملک چلے جانے والوں کی کرپشن کا دفاع ہم کیوں کریں؟، طویل عرصے تک حلقے کا رخ نہ کرنے پر کارکنوں نے شاہد خاقان کو بھی آڑے ہاتھوں لیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ لیگی کارکنوں کا کہنا ہے قیادت کو عوام کی بجائے اپنے مسائل کی فکر لا حق ہے، پہلی لہر میں ہم خود کہتے رہے کہ حکومت مکمل لاک ڈاؤن نہیں کر رہی اور آج جب دوسری لہر آئی ہے تو ہم خود جلسے جلوس کر رہے ہیں۔ مسرت جمشید چیمہ نے کہا کہ کارکنوں اور عوام کے لا تعلق ہونے پر مریم نواز نے خود باہر نکلنے کا فیصلہ کیاہے لیکن عوام انہیں بھی پذیرائی نہیں دیں گے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.