پنشن اور تنخواہیں کم کرو، پنشنرز اور سرکاری ملازمین بارے حکومت پر آئی ایم ایف کے دباؤ کا انکشاف

اسلام آباد (این این آئی) وفاقی حکومت کی قائم خصوصی کمیٹی نے سرکاری ملازمین کی تنخواہ اور پینشن میں اصلاحات کیلئے کام کا آغاز کر دیا، وفاقی حکومت ملازمین کو تنخواہ میں 431 ارب روپے جبکہ پنشن میں 421 ارب روپے سالانہ ادا کر رہی ہے۔ مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے پے اینڈ پنشن کمیشن 2020ء کا افتتاحی اجلاس سے خطاب کیا،پے اینڈ پنشن کمیشن سابق

وفاقی سیکرٹیری نرگس سیٹھی کی سربراہی میں سرکاری اور نجی شعبے کے سینئر پیشہ ور افراد پر مشتمل ہے۔ذرائع کے مطابق وفاقی حکومت ملازمین کو تنخواہ میں 431 ارب روپے جبکہ پنشن میں 421 ارب روپے سالانہ ادا کر رہی ہے آئی ایم ایف کا دباؤ ہے کہ سرکاری ملازمین کی پنشن کا بوجھ کم کیا جائے جبکہ ملازمین کی تنخواہ کم کرنے کیلئے عملہ کم کیا جائے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.