پاک بحریہ کے سابق سربراہ ایڈمرل فصیح بخاری انتقال کر گئے انہوں نے کمیشن کب حاصل کیا، کتنی جنگیں لڑیں ، قبل از وقت ریٹائرمنٹ کیوں لی؟پڑھئے تفصیلات

اسلام آباد (آن لائن) پاک بحریہ کے سابق سربراہ ایڈمرل فصیح بخاری اسلام آباد میں انتقال کر گئے ، ترجمان پاک بحریہ کے مطابق ا یڈمرل فصیح بخاری نے 1962 میں پاک بحریہ میں کمیشن حاصل کیا۔ایڈمرل فصیح بخاری 1997 سے 1999 تک پاک بحریہ کے سربراہ رہے ۔

چیف آف دی نیول اسٹاف ایڈمرل محمد امجد خان نیازی نے ایڈمرل فصیح بخاری کے انتقال پر اظہار تعزیت کیا ہے ۔ اپنے تعزیتی پیغام میں انہوں نے کہا مرحوم کی پاک بحریہ کے لیے خدمات نا قابل فراموش ہیں ۔ انہوں نے کہا اللہ تعالی مرحوم کو اپنی جوار رحمت میں جگہ دے اور لواحقین کو صدمہ برداشت کرنے کا حوصلہ عطا فرمائے ۔(امین )۔یاد رہے کہ ایڈمرل فصیح بخاری (دومئی1997 تا2 اکتوبر1999 ) پاک بحریہ کے چودہویں سربراہ بنے ،ایڈمرل فصیح بخاری نے یکم جنوری 1959 کو پاک بحریہ میں کمیشن حاصل کیا۔ 1965 اور 1971 اور کارگل کی جنگوں میں حصہ لیا۔ 10نومبر 1994 کو پاکستان بحریہ کے چیف آف سٹاف بنے اور 2 اکتوبر 1999 کو جنرل پرویز مشرف کے چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی بنائے جانے پر قبل از وقت ریٹائرمنٹ لے لی۔ اکتوبر 2011 میں انہیں قومی احتساب بیورو (نیب) کا چیئرمین مقرر کردیا گیا۔ انہیں ان کی خدمات کے اعتراف کے طور پر نشان امتیاز (ملٹری)، ہلال امتیاز (ملٹری)، ستارہ امتیاز (ملٹری) اور ستارہ بسالت کے اعزازت عطا ہوئے ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.