میڈیا کو مولانا خادم حسین رضوی کے جنازے کی لائیو کوریج کے بارے میں کیا حکم ملا؟حامد میر کا بڑا انکشاف

اسلام آباد،لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک،آن لائن)تحریک لبیک پاکستان کے سربراہ علامہ خادم حسین رضوی کو نماز جنازہ کی ادائیگی کے بعد لاہور میں سپرد خاک کر دیا گیا ،ان کی نماز جنازہ میں بھاری تعداد میں لوگوں نے شرکت کی اور پاکستان بھر سے قافلے گزشتہ رات سے ہی پہنچنا شروع ہو گئے تھے اور اس تمام مناظرکو ٹی وی چینلز پر براہ راست دکھایا گیا ۔دوسری جانب سینئر صحافی حامد میر نے مولانا خادم حسین رضوی کے جنازے میں شرکت کرنے والے لوگوں کی ویڈیوسوشل میڈیا پر شیئر کرتے ہوئے ٹی وی چینلز کو سخت تنقید کا نشانہ بنا ڈالا ۔سینئر صحافی

حامدمیر کا اپنے پیغام میں کہناتھا کہ پیمرا کی طرف سے ٹی وی چینلز کو کہا جا رہا ہے خادم رضوی کے جنازے کی لائیو کوریج نہ کی جائے، جنازے کی لائیو کوریج روکنا آسان ہے کیونکہ ٹی وی چینلز کمزور ہیں ،ریاست اتنی ہی طاقتور ہے تو جنازے کو بھی صرف تین سو افراد تک محدود کر کے دکھاتی ،میڈیا پر ڈنڈا چلانے والے اپنے گریبان میں جھانکیں۔سینئر صحافی حامد میر کا اپنے ایک اور پیغام میں کہناتھا کہ علامہ خادم رضوی چند دن پہلے تک زندہ تھے تو انکی تقریر اور جلسہ ٹی وی پر نہیں دکھایا جا سکتا تھا وہ دنیا سے چلے گئے تو صدر مملکت سے کالعدم تحریک طالبان پاکستان تک سب نے تعزیت کر دی اب انکے جنازے کی خبریں بھی ٹی وی چینلز دکھا رہے ہیں یہ دراصل معاشرے اور میڈیا کی منافقت کا جنازہ ہے.۔دریں اثناتحریک لبیک پاکستان کے قائد علامہ خادم حسین رضوی کے جنازے کے حوالے سے لاہور کے شہریوں نے اس جنازے کو لاہور کی تاریخ کا سب سے بڑا جنازہ قرار دے دیا ہے۔ علامہ خادم حسین رضوی مرحوم کے نماز جنازہ نے شہر کے تمام بڑے نماز جنازوں کا ریکارڈ بھی توڑ دیا ہے۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ تحریک لبیک پاکستان علامہ خادم حسین رضوی کی دینی خدمات کے پیش نظر پنجاب کی تیسری بڑی سیاسی جماعت تھی۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *