پرچوں کی چیکنگ اور تحقیقی مقالوں کے دوران ہراساں کیا جاتا ہے ، معروف یونیورسٹی کی طالبات سڑکوں پر نکل آئیں

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)اسلامیہ کالج یونیورسٹی پشاور کی طالبات نے ادارے میں ہراسانی کے مبینہ واقعات کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا ۔مظاہرین نے بینرز اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر طالبات کو تحفظ فراہم کرنے اور واقعات کی روک تھام کے مطالبات درج تھے۔

روزنامہ جنگ کی رپورٹ کے مطابق طالبات نے بتایا کہ پرچوں کی چیکنگ اور تحقیقی مقالوں کے دوران طالبات کو ہراساں کیا جاتا ہے، طالبات وائس چانسلر دفتر کے سامنے جمع ہوئیں اور نعرے بازی کی بعد ازاں طلبا بھی مظاہرے میں شریک ہوئے، مظاہرین نییونیورسٹی انتظامیہ اور اساتذہ کے خلاف نعرے بازی کی۔ طالبات کا کہنا تھا کہ پرچوں کی چیکنگ اور تحقیقی مقالوں کے دوران طالبات کو ہراساں کیا جاتا ہے انتظامیہ طالبات کو تحفظ فراہم نہیں کر رہی ہے، ہراسانی کے واقعات کی تحقیقات کر کے ذمہ داروں کو سزا دی جائے اور طالبات کو ہر قسم ہراسانی سے تحفظ فراہم کیا جائے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *