جنرل (ر)عبدالقادر بلوچ اکیلے نہیں جارہے بلکہ انکے ساتھ کونسا اہم رکن اگلےہفتے پارٹی چھوڑنے والا ہے؟حیران کن انکشاف

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک )نجی ٹی وی پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے سینئر تجزیہ کار عامر متین نے انکشاف کرتے ہوئے کہا ہے کہ عبد القادر بلوچ نے بیان دیا کہ میں اب نواز شریف کے اس بیانیے کیساتھ نہیں چل سکتا اور انہوں نے پارٹی چھوڑنے کا اعلان کیا ، وہ اکیلے نہیں جارہے بلکہ بلوچستان کی پوری پارٹی ساتھ لے کر جائیں گے ۔ تفصیلات کے مطابق سینئر تجزیہ کار کا کہنا تھا کہ

بلوچستان میں کوئی پارٹی نہیں چل سکتی ، وہاں نہ ن لیگ نہ پیپلز پارٹی ایڈجسٹ کرتی ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ ثنا ء اللہ ذہری اینڈپارٹی تو پہلے ہی نالا ں ہے ، 7نومبر فیصلہ کیا جائے اور سارا چپٹر بند ہو جائے گا ۔ دوسری جانب سینئر تجزیہ کار ارشاد احمد عارف نے کہا ہےمیری اطلاعات کے مطابق عبد القادر بلوچ سمیت کئی لوگ ن لیگ سے پیچھے ہٹ رہے ہیں،ایاز صادق نے اب سٹینڈ لینے کی بات کی ہے ، ہوسکتا ہے یہ نوازشریف کی طرف سے شاباش کی وجہ سے ہو، پاکستان نے بھارت کا غرور مٹی میں ملایا،یہ سپہ سالار کو نشانہ بنارہے اور کہتے ہیں کہ ہم فوج کے خادم ہیں،کیا سپہ سالار کے بغیر کسی فوج کا تصور ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ ایاز صادق کے بیان والے ایشو پر ن لیگ کے اندر اگر واضح تقسیم نہ ہو تو پھر تعجب کی بات ہے ۔وہ شخص مسلم لیگی ہی نہیں ہے جو اپنے دل میں انڈیا کی محبت پالتا ہو اور انڈیا سے نفرت نہ کرتا ہو۔مسلم لیگی جیسا بھی ہواس کا پاکستان ، فوج ،پاکستان کی سلامتی اور انڈیا کے حوالے سے ایک مزاج ہے ۔نجی ٹی وی پروگرام میں اینکر پرسن اسد اللہ خان سے گفتگو کے دوران کہاکہ قائد اعظمؒ کے فرامین ،اقبالؒ کی سوچ سے انحراف کرکے کوئی اصلی نہیں جعلی مسلم لیگی ہوسکتا ہے ،اگر نوازشریف عبد الصمد اچکزئی کی برسی کی تقریب میں نہ جاتے تو بلوچستان میں جو مسلم لیگ کی حکومت ختم ہوئی وہ ختم نہیں ہونی تھی۔ سینئر تجزیہ کار ارشاد احمد عارف نے کہا ہے ایاز صادق کے بیان والے ایشو پر ن لیگ کے اندر اگر واضح تقسیم نہ ہو تو پھر تعجب کی بات ہے ۔وہ شخص مسلم لیگی ہی نہیں ہے جو اپنے دل میں انڈیا کی محبت پالتا ہو اور انڈیا سے نفرت نہ کرتا ہو۔مسلم لیگی جیسا بھی ہواس کا پاکستان ، فوج ،پاکستان کی سلامتی اور انڈیا کے حوالے سے ایک مزاج ہے ۔نجی ٹی وی پروگرام میں اینکر پرسن اسد اللہ خان سے گفتگو کے دوران کہاکہ قائد اعظمؒ کے فرامین ،اقبالؒ کی سوچ سے انحراف کرکے کوئی اصلی نہیں جعلی مسلم لیگی ہوسکتا ہے ،اگر نوازشریف عبد الصمد اچکزئی کی برسی کی تقریب میں نہ جاتے تو بلوچستان میں جو مسلم لیگ کی حکومت ختم ہوئی وہ ختم نہیں ہونی تھی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.